غزل : فرحان انجم ۔ ایبٹ آباد، پاکستان

واسطے دِل کے ہو نظارا اب
بس کہ ہوتا نہیں گزارا اب
دل سے باہر کہ دِل کے اندر ہوں
فیصلہ کیجئے خدا را اب
اب کے تھوڑی سی جو رعایت ہو
پیار ہو گا نہیں دوبارہ اب
اُن سے منسوب ہو گیا انجمؔ
نام مٹتا نہیں ہمارا اب