نظم : تیری یاد نے پت جھڑ کو بھی رنگ دیا ہے ۔ حنیف ترین ۔ سعودی عرب

پیلے موسم کی گرمی میں جھلس رہا ہوں
تنہائی کی گود میں بیٹھا
بے کیفی میں سلگ رہا ہوں
خواب کے آگے
آنکھوں میں اس پار کا منظر
سبز سنہرا سا لگتا ہے
تیری یادوں کا اودا ساون ٹھہر ٹھہر کر ۔۔۔۔۔
مجھ میں ہر سو برس رہا ہے
جس کی خوشبو ،رنگ جھولے میں ۔۔۔۔پینگ بڑھا کر
وقت کے دل میں
زور زور سے دھڑک رہی ہے
تجھ سے ملن کوپھڑک رہی ہے