اداریہ
ماہنامہ کائنات کا 67 واں شمارہ پیش کرتے ہوئے مجھے بے حد خوشی محسوس ہو رہی ہے۔

رمضان المبارک کا با برکت مہینہ ہم سے رخصت ہو رہا ہے اور عید کی خوشیاں ہمارے ذہن و دل پر دستک دے رہی ہیں۔
قارئینِ کائنات کو عید کی پیشگی مبارک باد!

زیر نظر شمارے کی شروعات علیم صبا نویدی کی حمد پاک اور اسلم بدر ؔ کی نعت پاک سے ہوتی ہے۔ 
منظوم حصے میں صابر اقبال، سعید صاحب، اصغر علی، راشد محمود راشدؔ، محمد فاروق المنان، صبا جرال، کاشف بٹ اور مسرت حسین عازمؔ کی غزلیں اور ستیہ پال آننداورعزیز بلگامی کی نظمیں اور عرفان عارف کے ہائکو موجود ہیں ۔بطورِ خاص پیش کش کے طور پر اس ماہ عالم خورشید کی بارہ غزلیں شامل کی گئی ہیں۔ نثری حصے میں ایم مبین ، جعفر محمود ہاشمی اور تبسم فاطمہ کے افسانے اور ابراہیم افسر اور سید مقبول حسین کے مضامین شامل ہیں ۔ مشہور ترکی النسل اردو اسکالر خلیل طوق آر سے کامران غنی صبا کا انٹرویو بہت معلوماتی ہے اور امید ہے قارئین کو پسند آئے گا۔خورشید احمد عوان کا مزاحیہ مضمون "ڈاکٹر مزاح نگار" بھی دلچسپ ہے۔
عظیم انصاری نےاس ماہ جاوید نہال حشمی کے افسانوی مجموعے ”دیوار“ پر اپنا تبصرہ پیش کیا ہے۔

مجھے امید ہے کہ قارئین کرام کوگزشتہ شماروں کی طرح کائنات کا یہ شمارہ بھی پسند آئے گا۔
قارئین کرام سے درخواست ہے کہ ہر تخلیق کے مطالعے کے بعدبرائے مہربانی  Five Star Rank    اور Facebook comments  کی شکل میں اپنے تاثرات سے ضرور نوازیں۔

خورشید اقبال                    


ادارئیے کو آپ کتنے ستارے دینا چاہیں گے؟